Explanation of Kitaab-ul-Aetisaam of Saheeh Bukharee – Shaykh Rabee bin Hadee Al-Madkhalee

شرح کتاب الاعتصام للبخاری – شیخ ربیع بن ہادی المدخلی

ترجمہ: طارق علی بروہی

مصدر: بهجة القاري بفوائد منهجية ودروس تربوية من كتاب الإعتصام بالكتاب والسنة من صحيح البخاري

پیشکش: توحید خالص ڈاٹ کام


بسم اللہ الرحمن الرحیم

حدیث 1: حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ بُكَيْرٍ ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنَا اللَّيْثُ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ عُقَيْلٍ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ ابْنِ شِهَابٍ ، ‏‏‏‏‏‏أَخْبَرَنِي أَنَسُ بْنُ مَالِكٍ ، ‏‏‏‏‏‏أَنَّهُ سَمِعَ عُمَرَ الْغَدَ حِينَ بَايَعَ الْمُسْلِمُونَ أَبَا بَكْرٍ وَاسْتَوَى عَلَى مِنْبَرِ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ تَشَهَّدَ قَبْلَ أَبِي بَكْرٍ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ:‏‏‏‏ “أَمَّا بَعْدُ، ‏‏‏‏‏‏فَاخْتَارَ اللَّهُ لِرَسُولِهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ الَّذِي عِنْدَهُ عَلَى الَّذِي عِنْدَكُمْ وَهَذَا الْكِتَابُ الَّذِي هَدَى اللَّهُ بِهِ رَسُولَكُمْ، ‏‏‏‏‏‏فَخُذُوا بِهِ تَهْتَدُوا وَإِنَّمَا هَدَى اللَّهُ بِهِ رَسُولَهُ”.

حدیث 2: حَدَّثَنَا مُوسَى بْنُ إِسْمَاعِيلَ ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنَا وُهَيْبٌ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ خَالِدٍ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ عِكْرِمَةَ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ ابْنِ عَبَّاسٍ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ “ضَمَّنِي إِلَيْهِ النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، ‏‏‏‏‏‏وَقَالَ:‏‏‏‏ اللَّهُمَّ عَلِّمْهُ الْكِتَابَ”.

حدیث 3: حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ صَبَّاحٍ ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنَا مُعْتَمِرٌ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ سَمِعْتُ عَوْفًا ، ‏‏‏‏‏‏أَنَّ أَبَا الْمِنْهَالِ حَدَّثَهُ، ‏‏‏‏‏‏أَنَّهُ سَمِعَ أَبَا بَرْزَةَ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ “إِنَّ اللَّهَ يُغْنِيكُمْ أَوْ نَغَشَكُمْ بِالْإِسْلَامِ وَبِمُحَمَّدٍ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ”، ‏‏‏‏‏‏قَالَ أَبُو عَبْد اللَّهِ:‏‏‏‏ وَقَعَ هَاهُنَا يُغْنِيكُمْ، ‏‏‏‏‏‏وَإِنَّمَا هُوَ نَعَشَكُمْ، ‏‏‏‏‏‏يُنْظَرُ فِي أَصْلِ كِتَابِ الِاعْتِصَامِ.

Download MP3

حدیث 4: حَدَّثَنَا إِسْمَاعِيلُ ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنِي مَالِكٌ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ دِينَارٍ ، ‏‏‏‏‏‏”أَنَّ عَبْدَ اللَّهِ بْنَ عُمَرَ كَتَبَ إِلَى عَبْدِ الْمَلِكِ بْنِ مَرْوَانَ يُبَايِعُهُ:‏‏‏‏ وَأُقِرُّ لَكَ بِذَلِكَ بِالسَّمْعِ وَالطَّاعَةِ عَلَى سُنَّةِ اللَّهِ وَسُنَّةِ رَسُولِهِ فِيمَا اسْتَطَعْتُ”.

بَابُ الاِقْتِدَاءِ بِسُنَنِ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ

حدیث 5: حَدَّثَنَا مُسَدَّدٌ ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنَا سُفْيَانُ ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنَا الزُّهْرِيُّ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ وَزَيْدِ بْنِ خَالِدٍ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ كُنَّا عِنْدَ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ:‏‏‏‏ “لَأَقْضِيَنَّ بَيْنَكُمَا بِكِتَابِ اللَّهِ”.

حدیث 6: حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ سِنَانٍ ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنَا فُلَيْحٌ ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنَا هِلَالُ بْنُ عَلِيٍّ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ عَطَاءِ بْنِ يَسَارٍ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ ، ‏‏‏‏‏‏أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ “كُلُّ أُمَّتِي يَدْخُلُونَ الْجَنَّةَ إِلَّا مَنْ أَبَى، ‏‏‏‏‏‏قَالُوا:‏‏‏‏ يَا رَسُولَ اللَّهِ، ‏‏‏‏‏‏وَمَنْ يَأْبَى ؟، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ مَنْ أَطَاعَنِي دَخَلَ الْجَنَّةَ، ‏‏‏‏‏‏وَمَنْ عَصَانِي فَقَدْ أَبَى”.

Download MP3

حدیث 7- حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ عَبَادَةَ ، ‏‏‏‏‏‏أَخْبَرَنَا يَزِيدُ ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنَا سَلِيمُ بْنُ حَيَّانَ وَأَثْنَى عَلَيْهِ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنَا سَعِيدُ بْنُ مِينَاءَ ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنَا أَوْ سَمِعْتُ جَابِرَ بْنَ عَبْدِ اللَّهِ ، ‏‏‏‏‏‏يَقُولُ:‏‏‏‏ “جَاءَتْ مَلَائِكَةٌ إِلَى النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ وَهُوَ نَائِمٌ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ بَعْضُهُمْ:‏‏‏‏ إِنَّهُ نَائِمٌ، ‏‏‏‏‏‏وَقَالَ بَعْضُهُمْ:‏‏‏‏ إِنَّ الْعَيْنَ نَائِمَةٌ وَالْقَلْبَ يَقْظَانُ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالُوا:‏‏‏‏ إِنَّ لِصَاحِبِكُمْ هَذَا مَثَلًا، ‏‏‏‏‏‏فَاضْرِبُوا لَهُ مَثَلًا، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ بَعْضُهُمْ:‏‏‏‏ إِنَّهُ نَائِمٌ، ‏‏‏‏‏‏وَقَالَ بَعْضُهُمْ:‏‏‏‏ إِنَّ الْعَيْنَ نَائِمَةٌ وَالْقَلْبَ يَقْظَانُ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالُوا:‏‏‏‏ مَثَلُهُ كَمَثَلِ رَجُلٍ بَنَى دَارًا وَجَعَلَ فِيهَا مَأْدُبَةً وَبَعَثَ دَاعِيًا، ‏‏‏‏‏‏فَمَنْ أَجَابَ الدَّاعِيَ دَخَلَ الدَّارَ وَأَكَلَ مِنَ الْمَأْدُبَةِ، ‏‏‏‏‏‏وَمَنْ لَمْ يُجِبْ الدَّاعِيَ لَمْ يَدْخُلِ الدَّارَ وَلَمْ يَأْكُلْ مِنَ الْمَأْدُبَةِ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالُوا:‏‏‏‏ أَوِّلُوهَا لَهُ يَفْقَهْهَا، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ بَعْضُهُمْ:‏‏‏‏ إِنَّهُ نَائِمٌ، ‏‏‏‏‏‏وَقَالَ بَعْضُهُمْ:‏‏‏‏ إِنَّ الْعَيْنَ نَائِمَةٌ وَالْقَلْبَ يَقْظَانُ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالُوا:‏‏‏‏ فَالدَّارُ الْجَنَّةُ، ‏‏‏‏‏‏وَالدَّاعِي مُحَمَّدٌ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، ‏‏‏‏‏‏فَمَنْ أَطَاعَ مُحَمَّدًا صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، ‏‏‏‏‏‏فَقَدْ أَطَاعَ اللَّهَ، ‏‏‏‏‏‏وَمَنْ عَصَى مُحَمَّدًا صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فَقَدْ عَصَى اللَّهَ، ‏‏‏‏‏‏وَمُحَمَّدٌ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فَرْقٌ بَيْنَ النَّاسِ”، ‏‏‏‏‏‏تَابَعَهُ قُتَيْبَةُ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْلَيْثٍ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ خَالِدٍ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ سَعِيدِ بْنِ أَبِي هِلَالٍ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ جَابِرٍ خَرَجَ عَلَيْنَا النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ.

حدیث 8- حَدَّثَنَا أَبُو نُعَيْمٍ ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنَا سُفْيَانُ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ الْأَعْمَشِ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ إِبْرَاهِيمَ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ هَمَّامٍ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ حُذَيْفَةَ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ “يَا مَعْشَرَ الْقُرَّاءِ، ‏‏‏‏‏‏اسْتَقِيمُوا فَقَدْ سَبَقْتُمْ سَبْقًا بَعِيدًا، ‏‏‏‏‏‏فَإِنْ أَخَذْتُمْ يَمِينًا وَشِمَالًا لَقَدْ ضَلَلْتُمْ ضَلَالًا بَعِيدًا”.

Download MP3

حدیث 9- حَدَّثَنَا قُتَيْبَةُ بْنُ سَعِيدٍ ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنَا لَيْثٌ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ عُقَيْلٍ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ الزُّهْرِيِّ ، ‏‏‏‏‏‏أَخْبَرَنِي عُبَيْدُ اللَّهِ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عُتْبَةَ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْأَبِي هُرَيْرَةَ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ لَمَّا تُوُفِّيَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ وَاسْتُخْلِفَ أَبُو بَكْرٍ بَعْدَهُ وَكَفَرَ مَنْ كَفَرَ مِنَ الْعَرَبِ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ عُمَرُ لِأَبِي بَكْرٍ :‏‏‏‏ كَيْفَ تُقَاتِلُ النَّاسَ، ‏‏‏‏‏‏وَقَدْ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ “أُمِرْتُ أَنْ أُقَاتِلَ النَّاسَ حَتَّى يَقُولُوا:‏‏‏‏ لَا إِلَهَ إِلَّا اللَّهُ، ‏‏‏‏‏‏فَمَنْ قَالَ لَا إِلَهَ إِلَّا اللَّهُ عَصَمَ مِنِّي مَالَهُ وَنَفْسَهُ إِلَّا بِحَقِّهِ وَحِسَابُهُ عَلَى اللَّهِ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ:‏‏‏‏ وَاللَّهِ لَأُقَاتِلَنَّ مَنْ فَرَّقَ بَيْنَ الصَّلَاةِ وَالزَّكَاةِ، ‏‏‏‏‏‏فَإِنَّ الزَّكَاةَ حَقُّ الْمَالِ، ‏‏‏‏‏‏وَاللَّهِ لَوْ مَنَعُونِي عِقَالًا كَانُوا يُؤَدُّونَهُ إِلَى رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ لَقَاتَلْتُهُمْ عَلَى مَنْعِهِ”، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ عُمَرُ:‏‏‏‏ فَوَاللَّهِ مَا هُوَ إِلَّا أَنْ رَأَيْتُ اللَّهَ قَدْ شَرَحَ صَدْرَ أَبِي بَكْرٍ لِلْقِتَالِ، ‏‏‏‏‏‏فَعَرَفْتُ أَنَّهُ الْحَقُّ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ ابْنُ بُكَيْرٍ وَعَبْدُ اللَّهِ:‏‏‏‏ عَنْ اللَّيْثِ عَنَاقًا وَهُوَ أَصَحُّ.

Download MP3

حدیث 10– حَدَّثَنِي إِسْمَاعِيلُ ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنِي ابْنُ وَهْبٍ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ يُونُسَ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ ابْنِ شِهَابٍ ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنِي عُبَيْدُ اللَّهِ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عُتْبَةَ ، ‏‏‏‏‏‏أَنَّعَبْدَ اللَّهِ بْنَ عَبَّاسٍ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُمَا قَالَ:‏‏‏‏ “قَدِمَ عُيَيْنَةُ بْنُ حِصْنِ بْنِ حُذَيْفَةَ بْنِ بَدْرٍ، ‏‏‏‏‏‏فَنَزَلَ عَلَى ابْنِ أَخِيهِ الْحُرِّ بْنِ قَيْسِ بْنِ حِصْنٍ وَكَانَ مِنَ النَّفَرِ الَّذِينَ يُدْنِيهِمْ عُمَرُ وَكَانَ الْقُرَّاءُ أَصْحَابَ مَجْلِسِ عُمَرَ وَمُشَاوَرَتِهِ كُهُولًا كَانُوا أَوْ شُبَّانًا، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ عُيَيْنَةُ لِابْنِ أَخِيهِ:‏‏‏‏ يَا ابْنَ أَخِي هَلْ لَكَ وَجْهٌ عِنْدَ هَذَا الْأَمِيرِ، ‏‏‏‏‏‏فَتَسْتَأْذِنَ لِي عَلَيْهِ ؟، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ سَأَسْتَأْذِنُ لَكَ عَلَيْهِ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ ابْنُ عَبَّاسٍ:‏‏‏‏ فَاسْتَأْذَنَ لِعُيَيْنَةَ فَلَمَّا دَخَلَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ يَا ابْنَ الْخَطَّابِ وَاللَّهِ مَا تُعْطِينَا الْجَزْلَ وَمَا تَحْكُمُ بَيْنَنَا بِالْعَدْلِ، ‏‏‏‏‏‏فَغَضِبَ عُمَرُ حَتَّى هَمَّ بِأَنْ يَقَعَ بِهِ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ الْحُرُّ:‏‏‏‏ يَا أَمِيرَ الْمُؤْمِنِينَ، ‏‏‏‏‏‏إِنَّ اللَّهَ تَعَالَى، ‏‏‏‏‏‏قَالَ لِنَبِيِّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ خُذِ الْعَفْوَ وَأْمُرْ بِالْعُرْفِ وَأَعْرِضْ عَنِ الْجَاهِلِينَ سورة الأعراف آية 199 وَإِنَّ هَذَا مِنَ الْجَاهِلِينَ فَوَاللَّهِ مَا جَاوَزَهَا عُمَرُ حِينَ تَلَاهَا عَلَيْهِ وَكَانَ وَقَّافًا عِنْدَ كِتَابِ اللَّهِ”.

Download MP3

حدیث 11– حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ مَسْلَمَةَ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ مَالِكٍ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ هِشَامِ بْنِ عُرْوَةَ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ فَاطِمَةَ بِنْتِ الْمُنْذِرِ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَسْمَاءَ بِنْتِ أَبِي بَكْرٍرَضِيَ اللَّهُ عَنْهُمَا، ‏‏‏‏‏‏أَنَّهَا قَالَتْ:‏‏‏‏ أَتَيْتُ عَائِشَةَ حِينَ خَسَفَتِ الشَّمْسُ وَالنَّاسُ قِيَامٌ وَهِيَ قَائِمَةٌ تُصَلِّي، ‏‏‏‏‏‏فَقُلْتُ مَا لِلنَّاسِ، ‏‏‏‏‏‏فَأَشَارَتْ بِيَدِهَا نَحْوَ السَّمَاءِ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَتْ:‏‏‏‏ سُبْحَانَ اللَّهِ، ‏‏‏‏‏‏فَقُلْتُ آيَةٌ، ‏‏‏‏‏‏قَالَتْ بِرَأْسِهَا:‏‏‏‏ أَنْ نَعَمْ فَلَمَّا انْصَرَفَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ حَمِدَ اللَّهَ وَأَثْنَى عَلَيْهِ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ قَالَ:‏‏‏‏ “مَا مِنْ شَيْءٍ لَمْ أَرَهُ إِلَّا وَقَدْ رَأَيْتُهُ فِي مَقَامِي هَذَا حَتَّى الْجَنَّةَ وَالنَّارَ، ‏‏‏‏‏‏وَأُوحِيَ إِلَيَّ أَنَّكُمْ تُفْتَنُونَ فِي الْقُبُورِ قَرِيبًا مِنْ فِتْنَةِ الدَّجَّالِ، ‏‏‏‏‏‏فَأَمَّا الْمُؤْمِنُ أَوِ الْمُسْلِمُ لَا أَدْرِي أَيَّ ذَلِكَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَتْ أَسْمَاءُ:‏‏‏‏ فَيَقُولُ مُحَمَّدٌ:‏‏‏‏ جَاءَنَا بِالْبَيِّنَاتِ فَأَجَبْنَاهُ وَآمَنَّا، ‏‏‏‏‏‏فَيُقَالُ:‏‏‏‏ نَمْ صَالِحًا عَلِمْنَا أَنَّكَ مُوقِنٌ، ‏‏‏‏‏‏وَأَمَّا الْمُنَافِقُ أَوِ الْمُرْتَابُ لَا أَدْرِي أَيَّ ذَلِكَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَتْ أَسْمَاءُ:‏‏‏‏ فَيَقُولُ:‏‏‏‏ لَا أَدْرِي سَمِعْتُ النَّاسَ يَقُولُونَ شَيْئًا فَقُلْتُهُ”.

Download MP3

حدیث 12- حَدَّثَنَا إِسْمَاعِيلُ ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنِي مَالِكٌ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِي الزِّنَادِ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ الْأَعْرَجِ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ ، ‏‏‏‏‏‏عَنِ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ “دَعُونِي مَا تَرَكْتُكُمْ إِنَّمَا هَلَكَ مَنْ كَانَ قَبْلَكُمْ بِسُؤَالِهِمْ وَاخْتِلَافِهِمْ عَلَى أَنْبِيَائِهِمْ، ‏‏‏‏‏‏فَإِذَا نَهَيْتُكُمْ عَنْ شَيْءٍ فَاجْتَنِبُوهُ، ‏‏‏‏‏‏وَإِذَا أَمَرْتُكُمْ بِأَمْرٍ فَأْتُوا مِنْهُ مَا اسْتَطَعْتُمْ”.

Download MP3

سوال و جواب

س 1: جو کوئی ایسی مجلس میں بیٹھا جس میں اللہ تعالی اور اس کی آیات کا مذاق اڑایا جارہا ہو، پس وہ اپنے دل سے انکار کرے لیکن زبان سے انکار نہ کرے، ساتھ ہی اس مجلس سے نکلے بھی نہیں حالانکہ وہ اس پر قادر بھی تھا، تو کیا اس صورت میں وہ کافر ہوجائے گا یا نہیں؟ اور اللہ عزوجل کے اس فرمان کی کیا تفسیر ہے کہ فرمایا: (اور یقیناً ہم نے تم پر کتاب میں یہ نازل فرمایا ہے کہ اگر تم سنو کہ اللہ کی آیات سے کفر کیا جارہا ہے اور ان کا  مذاق اڑایا جارہا ہے تو ایسوں کے ساتھ مت بیٹھو، یہاں تک کہ وہ کسی دوسرے بات میں لگ جائيں، بے شک اس (بیٹھے رہنے کی) صورت میں تم بھی ان جیسے ہو، بے شک اللہ تعالی منافقوں اور کافروں ان سب کو جہنم میں جمع کرنے والا ہے) (النساء: 140)؟

Download MP3

س 2: اللہ تعالی کے اس فرمان کی کیا تفسیر ہے، فرمایا: (اور یقیناً ہم نے تم پر کتاب میں یہ نازل فرمایا ہے کہ اگر تم سنو کہ اللہ کی آیات سے کفر کیا جارہا ہے اور ان کا  مذاق اڑایا جارہا ہے تو ایسوں کے ساتھ مت بیٹھو، یہاں تک کہ وہ کسی دوسرے بات میں لگ جائيں، بے شک اس (بیٹھے رہنے کی) صورت میں تم بھی ان جیسے ہو، بے شک اللہ تعالی منافقوں اور کافروں ان سب کو جہنم میں جمع کرنے والا ہے) (النساء: 140)؟

Download MP3

س 3: اور آیت کے آخر میں جو فرمایا: (بے شک اس (بیٹھے رہنے کی) صورت میں تم بھی ان جیسے ہو، بے شک اللہ تعالی منافقوں اور کافروں ان سب کو جہنم میں جمع کرنے والا ہے) (النساء: 140) اس کی کیا تفسیر ہے؟

Download MP3

س 4: سوال:ایک ابتدائی طالبعلم کا  اس اختلاف کے تعلق سے کیا مؤقف ہونا چاہیے  جو علماء سنت کے مابین ان کے بعض فتاویٰ  میں ہوجاتا ہے، خصوصاً جبکہ ان میں سے بعض بعض علماء کے لیے تعصب کرتے ہيں اور یہ انہیں اس بات پر ابھارتا ہے کہ وہ دوسرے عالم کی شان میں تنقیص کرتے ہیں، پس آپ کس طرح نوجوانوں کی اس باب میں رہنمائی فرمائيں گے، وجزاکم اللہ خیراً؟

Download MP3

س 5: سائل کہتا ہے: “نعی” (میت کے اعلان) کی موجودہ صورتوں میں سے ایک صورت ہمارے ملک میں پھیلی ہوئی ہے، اور ہم نہيں جانتے کہ یہ اس ممنوعہ نعی میں داخل ہے کہ جس سے نبی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے منع فرمایا ہے، اور وہ یہ ہے کہ: اہل میت ایک گاڑی لیتے ہيں اور اس پر لاؤڈ اسپیکر لگاتے ہيں، پھر گلی گلی گھومتے ہيں اور اس لاؤڈ اسپیکر پر اعلان کرتے پھرتے ہيں: فلاں بن فلاں فوت ہوگیا ہے رحمہ اللہ، اور نماز جنازہ فلاں مسجد میں ادا کیا جائے گا، اور جنازے کو فلاں قبرستان میں لے جایا جائے گا، ہمیں اس بارے میں استفادہ فرمائیں، اللہ تعالی آپ کو اجر دے؟

Download MP3

س 6: ہم ان نوجوانوں کے ساتھ کیا برتاؤ کریں جو اللہ تعالی اور دین کو گالی دیتے ہيں؟ اور کیا ان میں سے کوئی مر جائے تو اس پر جنازہ پڑھیں؟

Download MP3

س 7: آپ کی اس شخص کے بارے میں کیا رائے ہےجو کہتا ہے: بے شک اللہ تعالی کی صفات کو فعلی اور ذاتی میں تقسیم کرنے سے ہميں کوئی فائدہ نہيں۔ کیونکہ سلف صفات کو بغیر اس تقسیم کے ثابت کیا کرتے تھے ۔ اور اسماء وصفات کے باب میں تقسیم کی طرف ہم نہيں جائيں گے سوائے اشد ضرورت یا فہم کے قریب لانے کے لیے؟

Download MP3

س 8: کیا امام ابن سیرین رحمہ اللہ کا قول:

“بے شک یہ علم دین ہے پس تم دیکھ لو کہ تم کس سے اپنا دین حاصل کررہے ہو”

علم حدیث کے ساتھ خاص ہے، یا پھر یہ عام قاعدہ ہے؟

Download MP3

س 9: نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے لوہے کی انگوٹھی پہننے سے منع فرمایا ہے، پس کیا یہ نہی مردوں کے ساتھ خاص ہیں عورتوں کے نہيں، یا یہ عام ہے مردوں اور عورتوں دونوں کے لیے؟

Download Mp3

س 10: ایک نوجوان ایک ایسے ہوٹل میں کام کرتا ہے جہاں شراب بھی بیچی جاتی ہے، یہ بات علم میں رہے کہ اس نوجوان کا مخصوص کام ہوٹل میں بطور خدمت کار نہيں ہے، اس کا اس ہوٹل میں کام کرنے کا کیا حکم ہے، وجزاکم اللہ خیراً؟

Download MP3

س 11: اس حدیث کی صحت کیا ہے:

 “اپنے دل سے فتویٰ پوچھو، اپنے نفس سے فتویٰ پوچھو، تین مرتبہ فرمایا، نیکی وہ ہے جس پر نفس مطمئن ہو اور گناہ وہ ہے جو نفس میں کھٹکے، اور سینے میں تردد پیدا ہو، اگرچہ لوگ اس (کے حق میں) فتویٰ دیتے رہیں”

 اگر یہ حدیث صحیح ہے تو اس کا معنی کیا ہے؟

Download MP3

س 12: سائلہ پوچھتی ہے: میری عمر بیس سال ہوچکی ہے، اور میں میڈیکل کالج میں پڑھتی ہوں ۔الحمدللہ اللہ نے مجھ پر احسان فرمایا اور دین پر استقامت دی، لیکن میں جس کالج میں پڑھتی ہوں وہاں مخلوط تعلیم ہے۔ اور میں اپنی تعلیم کو جاری نہيں رکھنا چاہتی بلکہ گھر پر ہی رہنا چاہتی ہوں۔ لیکن میرے والد میری زبردستی تعلیم جاری رکھوانا چاہتے ہيں ، اور مجھے مارتے اور گھر سے نکال دینے کی دھمکیاں بھی دیتے ہيں جب کبھی بھی میں یہ بات کرتی ہوں۔ ساتھ ہی یہ بات بھی آپ کے علم میں رہے کہ وہ کسی بھی دین دار نوجوان کے رشتے کو یہ اس حجت کے ساتھ رد کردیتے ہيں کہ پڑھائی مکمل کرنی ہے۔ لہذا آپ مجھے کیا نصیحت کرتے ہيں، جزاکم اللہ خیراً؟

Download MP3

س 13: آپ فضیلۃ الشیخ کی اس کلام پر تعلیق درکار ہے کہ:

 “بے شک ایک شخص میں سنت اور بدعت کبھی جمع ہوسکتے ہيں، چناچہ اس پر اگر سنت  غالب آتی ہے تو وہ سنی سلفی ہوتا ہے، اور اگر بدعت غالب آتی ہے تو گمراہ بدعتی ہوتا ہے”

 ہمیں اس بارے میں  استفادہ پہنچائيں، اللہ تعالی آپ کو اجر وثواب سے نوازے؟

Download MP3

س 14: سائل کہتا ہے الجزائر میں ہمارے یعنی سعودیہ کے بعد روزہ رکھے، اور چاہتے ہیں کہ عید کے بعد تک بیٹھے رہیں، تو وہ کیا کریں؟

Download MP3

س 15: ان میں سے ایک اپنی کتاب میں کہتا ہے: روافض کی آجکل لیبیا میں بہت سرگرمیاں ہیں؟

Download MP3

س 16: میرا کچھ مال حکومتی محکمے میں اٹکا ہوا ہے  جسے میں کسی بھی طور پر حاصل نہیں کرپارہا، لہذا مجھے ایک شخص نے کچھ مال کھلانے کے عوض میرا وہ مال نکلوا کر دینے کی پیشکش کی ہے۔ یہ بات بھی علم میں رہے کہ وہ شخص اس حکومتی محکمے کے مسئول کا قریبی رشتہ دار ہے؟

Download MP3

س 17: آپ کی ان لوگوں کے بارے میں کیا رائے ہے کہ جو آپ سے فون کے ذریعے رابطہ کرتے ہيں   اور مسائل آپ کے سامنے پیش کرتے ہيں۔ یہ بات علم میں رہے کہ وہ سوال نقل کرنے کی صحیح اہلیت نہیں رکھتے بلکہ سوال جیسا ہوتا ہے بالکل ویسے نقل ہی نہيں کرتے، پھر جو کچھ آپ جواب مرحمت فرماتے ہيں اسے وہ  مختلف کتابچوں میں شائع کرتے پھرتے ہيں، یہ کہتے ہوئے کہ شیخ نے یہ یہ فرمایا۔ پس آپ ہمیں کیا نصیحت کرتے ہیں؟

Download MP3

س 18: اس باب کی ان دو احادیث میں کیسے موافقت پیدا کی جائے گی:

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا:

 “مجھے چھوڑے رکھو اس وقت تک جب تک میں تمہیں چھوڑے رکھوں (یعنی زیادہ سوالات نہ کرو)” ۔

دوسری میں فرمایا:

 “جب انہيں علم نہيں تھا تو پوچھ کیوں نہ لیا! بے شک لاعلمی کی شفاء تو سوال کرلینے میں ہے”؟

Download MP3

س 19: میں سنت کی تطبیق کرنا چاہتا تھا اور زکوٰة الفطر کو عید کی صبح ادا کرنا چاہتا تھا لیکن میں بیدار نہ ہوسکا جبکہ لوگ عید نماز پڑھ کر نکل چکے تھے، کیونکہ رات دیر تک جاگا رہا تھا (اس وجہ سے صبح نہيں جاگ پایا)، اور میں نے ابھی تک اسے نہیں نکالا، اب میرے ذمے کیا ہے، کیا میں گنہگار ہوں؟ اور میرے پاس شیطان آکر یہ خیال دل میں ڈالتا ہے کہ تمہارے ساتھ یہ جو کچھ ہوا وہ دلیل ہے تمہارے روزے قبول نہ ہونے کی؟

Download MP3

س 20: کیا میرے لیے کسی بدعتی سے قرآن کی تعلیم لینا جائز ہے اگر وہ اس میں ماہر ہو اور اس کے پاس عالی سند ہو؟

Download MP3

س 21: ایک شخص کی کئی لوگوں سے لڑائی ہوئی اور سب نے اسے مارا جس سے اس کی موت واقع ہوگئی، وہ نہيں جانتے کہ کس کے مارنے سے وہ مرا، تو ان لوگوں کو کفارے کے اعتبار سے کیا کرنا چاہیے؟

Download MP3

س 22: سائل کہتا ہے: میں نے آپ کے جوابات میں سے ایک پڑھا جس میں آپ فرماتے ہیں: ابن مانع اپنے پاس سلفیت ہونےکے باوجود اشعریت میں مبتلا ہوئے۔ پس کیا یہ وہی شیخ ابن مانع ہيں جنہوں نے عقیدہ طحاویہ کی شرح کی ہے اور ان سے شیخ البانی نے باتيں منقول کی ہيں رحمہم اللہ؟

Download MP3

س 23: ہمارے ملک میں روافض کا مذہب پھیل رہا ہے، آج کے دور میں روافض کا کیا حکم ہے جبکہ ان کے یہاں بھی علم پھیل چکا ہے، کیا وہ کافر ہیں یا نہیں؟

Download MP3

س 24: ایک شخص نے کسی کو بلاقصد قتل کیا   اور دو ماہ کے روزے بھی رکھ لیے، اب وہ نہيں جانتا کہ اسے کیا کرنا چاہیے، کیونکہ وہ اس میت کے گھر والوں کو نہيں جانتا کہ وہ کہاں ہیں؟ یا اس تعلق سے کچھ بھی۔

Download MP3

س 25:  لوگوں کا ایک گروپ ہے جو انگوروں کے ایسے باغات میں کام کرتا ہے جو کہ شراب نچوڑنے کے لیے خاص ہيں، حالانکہ یہ بات معلوم ہے وہ لوگ اس شراب نچوڑنے کے عمل میں حصہ نہیں لیتے، شریعت کا اس میں کیا حکم ہے؟

Download MP3

س 26: زکوٰة سے متعلق دو سوالات:

اول: ایک شخص کے پاس مال ہے جس کی وہ زکوٰة دینا چاہتا ہے اور اس کا ایک محتاج بھائی بھی ہے، پس کیا اسے اس زکوٰة میں سے دینا جائز ہے؟

دوم: اس کا ایک پڑوسی محتاج ہے اور ایک قرابت دار ایسا ہے جس کی بیٹی مریضہ ہے اور وہ اس کا علاج کروانا چاہتا ہے، پس ان میں سے کسے زکوٰة دی جائے؟

Download MP3