Refutation of those who believe that the prophet is alive as of a worldly life after his death – Various 'Ulamaa

ان لوگوں کا رد جو یہ عقیدہ رکھتے ہیں کہ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اپنی وفات کے بعد

دنیاوی حیات کی طرح حیات ہیں   

مختلف علماء کرام

ترجمہ واضافہ جات: طارق علی بروہی

مصدر: فتاوى اللجنة الدائمة للبحوث العلمية والإفتاء، القول البليغ في التحذير من جماعة التبليغ۔

پیشکش: توحیدِ خالص ڈاٹ کام


بسم اللہ الرحمن الرحیم

بعض  لوگوں خصوصاً بریلویوں اور دیوبندی حیاتیوں کا یہ گمراہ کن عقیدہ ہے کہ محمد رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم بلکہ دیگر انبیاء کرام علیہم الصلاۃ والسلام پر بھی محض وعدۂ الہی کی وفاء کے لیے ایک آن کو موت طاری ہوئی اب وہ قبر کی برزخی نہیں بلکہ دنیاوی زندگی کی مانند حسی طور پر زندہ ہیں اور تصرف فرماتےہیں۔ اور بدعتیانہ محفل میلاد یا ہمارے بزرگوں وغیرہ کے پاس تشریف لاتے ہیں۔ بلکہ انہیں فوت شدہ سمجھنا گستاخی  ہے اور یوں کہنا چاہیے کہ ان پر ظاہری موت طاری ہوئی تھی بس انہوں نے دنیا سے پردہ فرمالیا ہے۔ اس غلط عقیدے کے رد میں علماء کرام کا کلام پیش خدمت ہے۔