Phenomena of declaring someone as innovator, sinner and disbeliever, and its regulations – Shaykh Saaleh bin Fawzaan Al-Fawzaan

تبدیع، تفسیق اور تکفیر کے مظاہر اور ان کے ضوابط

فضیلۃ الشیخ صالح بن فوزان الفوزان حفظہ اللہ

(سنیئر رکن کبار علماء کمیٹی، سعودی عرب)

تعلیق: الشیخ عبدالعزیز بن عبداللہ بن باز رحمہ اللہ

ترجمہ: طارق علی بروہی

مصدر: ظاهرة التبديع والتفسيق والتكفير وضوابطها (متعلقہ ضروری سوال وجواب کے ساتھ)

پیشکش: توحیدِ خالص ڈاٹ کام


بسم اللہ الرحمن الرحیم

شیخ صالح بن فوزان الفوزان حفظہ اللہ فرماتے ہیں :

فی زمانہ اس فتنے کا ظہور خصوصاً نوجوانوں کے اندر ہوا ہے اور بعض ایسے مسلمانوں میں بھی جو اسلام کی حقیقت سے جاہل ہیں۔ اس طرح کے ان کے یہاں حد سے متجاوز غیرت یا بے محل جذبات پائے جاتے ہیں تو ان کے یہاں یہ تکفیر، تفسیق اور تبدیع کے مظاہر نے جنم لیا ہے۔ لہذا تمام امور میں ان کا مشغلۂ حیات ہی یہ مذموم صفات بن کر رہ گئیں کہ وہ عیوب کی ٹوہ میں رہتے ہیں اور تلاش کرکرکے انہيں نشر کرتے ہيں یہاں تک کہ سب میں مشہور ہوجائے۔ یہ فتنے اور شر کی علامتوں میں سے ہے، اللہ تعالی سے دعاء ہے کہ وہ مسلمانوں کو ان کے شر سے محفوظ رکھے۔ اور نوجوان اسلام کو صحیح راہ کی جانب رہنمائی فرمائے، اور انہیں منہج سلف صالحین پر عمل اور اس پر گامزن رہنے کی توفیق عنایت فرمائے، اور انہیں داعیان سوء سے بچائے رکھے۔