Few rulings regarding Iʿtikāf

اعتکاف کے بعض احکام

جمع و ترتیب: طارق بن علی بروہی

مصدر: احادیث مبارکہ۔

پیشکش: توحیدِ خالص ڈاٹ کام


بسم اللہ الرحمٰن الرحیم

1- اعتکاف ایک عبادت ہے اس کے مشابہ کسی مزار وغیرہ پر فوت شدگان کے تقرب کے لیے مجاور بن کر بیٹھنا شرک ہے۔ (البقرۃ: 125)

2- کم سے کم اعتکاف کی حد نہیں جو کہ ایک ہفتہ، ایک دن، ایک گھنٹے کا بھی ہوسکتا ہے۔ (صحیح بخاری 2032، صحیح مسلم 1657)

3-  رمضان کا مسنون اعتکاف رمضان کے آخری عشرے (10 دن) میں کرنا چاہیے۔ (صحیح بخاری 2026، صحیح مسلم 1175)

4- مرد ہوں خواہ عورتیں اعتکاف مسجد میں ہوتا ہے (البقرۃ: 187) امہات المؤمنین رضی اللہ عنہن بھی مسجد میں ہی اعتکاف فرمایا کرتی تھیں (صحیح بخاری 2033) خواتین کا گھروں پر اعتکاف کرنا غیر ثابت ہے او ربدعت ہے۔

5- اعتکاف کے لیے جامع مسجد ہو تاکہ جن پر جمعہ پڑھنا فرض ہے انہيں جمعہ کی ادائیگی کے لیے باہر نہ نکلنا نہ پڑے۔(صحیح ابی داود 2473)

6- خواتین اپنے محرم کے ساتھ اعتکاف کرے(صحیح بخاری 2033) یا پھر محرم کی اجازت سے فتنے سے دور اور پرامن مسجد جہاں مردوزن کے اختلاط کا اندیشہ نہ ہو وہاں اعتکاف کرے(مفہوم حدیث صحیح بخاری2026، صحیح مسلم 1175)۔

7- رمضان کے اعتکاف میں روزے سے ہونا شرط نہيں لیکن سنت ضرور ہے۔( صحیح بخاری 2032، صحیح ابی داود 2473)

8- اعتکاف کے لیے مسجد میں خیمہ لگانا مسنون ہے۔(صحیح بخاری 2034)

9- اعتکاف میں بیوی سے مباشرت یا شہوت سے متعلق باتیں حرام ہیں(صحیح ابی داود 2473)۔ البتہ  تھوڑی دیر کی مباح باتیں جا‏ئز ہیں۔(صحیح بخاری 2038)

10- جماع کرنے سے اعتکاف ختم ہوجاتا ہے البتہ اس کاکفارہ ثابت نہیں(البقرۃ: 187)۔ لیکن احتلام ہوجانے سے اعتکاف ختم نہيں ہوتا اسے غسل کرلینا چاہیے(صحیح ابی داود 4403)۔

11- مسجد سے بدن کا کچھ حصہ نکل جائے  تو اعتکاف نہیں ٹوٹتا۔ البتہ مکمل طورپر مسجد سے باہر نکلنا اگر طبعی شرعی ضرورت کے تحت ہو جیسے استنجاء وغیرہ تو جائز ہے(صحیح بخاری 2029)۔ معتکف نہ کسی مریض کی عیادت کرے نہ جنازے کے ساتھ چلے (صحیح ابی داود 2473) الا یہ کہ اعتکاف سے پہلے شرط لگائی ہو فلاں کی عیادت کو جاؤں گا تو جاسکتا ہے، لیکن خریدوفروخت اور اس جیسے منافئ  اعتکاف کام بالکل بھی جائز نہيں۔

12- اعتکاف کرنے والا اعتکاف ختم بھی کرسکتا ہےاس کی قضاء واجب نہیں البتہ کرلی جائے تو افضل ہے(صحیح بخاری 2033)۔ لیکن  نذر کا اعتکاف واجب ہے(الانسان: 7، صحیح بخاری 6696)۔

14- اعتکاف تین مساجد (مسجد الحرام، مسجد نبوی اور مسجد اقصی) میں سب سے افضل ہے(السلسلة الصحيحة 2786)۔

15- اعتکاف کے فضائل پر کوئی صحیح حدیث ثابت نہيں۔

itikaaf_baaz_masail_ahkam