A warning for employees and workers – Shaykh Muhammad bin Saaleh Al-Uthaimeen

ملازمین اور نوکری کرنے والوں کے لیے تنبیہ

فضیلۃ الشیخ محمد بن صالح العثیمین رحمہ اللہ المتوفی سن 1421ھ

(سابق سنئیر رکن کبار علماء کمیٹی، سعودی عرب)

ترجمہ: طارق بن علی بروہی

مصدر: شرح رياض الصالحين 5/403۔

پیشکش: توحیدِ خالص ڈاٹ کام


بسم اللہ الرحمٰن الرحیم

اللہ تعالی کا فرمان ہے:

﴿وَيْلٌ لِّـلْمُطَفِّفِيْنَ، الَّذِيْنَ اِذَا اكْتَالُوْا عَلَي النَّاسِ يَسْتَوْفُوْنَ، وَاِذَا كَالُوْهُمْ اَوْ وَّزَنُوْهُمْ يُخْسِرُوْنَ، اَلَا يَظُنُّ اُولٰۗىِٕكَ اَنَّهُمْ مَّبْعُوْثُوْنَ، لِيَوْمٍ عَظِيْمٍ، يَّوْمَ يَقُوْمُ النَّاسُ لِرَبِّ الْعٰلَمِيْنَ﴾ (المطففین: 1-6)

(بڑی ہلاکت ہے ماپ تول میں کمی کرنے والوں کے لیے،  وہ لوگ کہ جب لوگوں سے ماپ کرلیتے ہیں تو پورا لیتے ہیں، اور جب انہیں ماپ کر، یا انہیں تول کر دیتے ہیں تو کم دیتے ہیں، کیا یہ لوگ یقین نہیں رکھتے کہ بےشک وہ اٹھائے جانے والے ہیں، ایک بڑے دن کے لیے، جس دن لوگ رب العالمین کے لیے کھڑے ہوں گے)

شیخ محمد بن صالح العثیمین  رحمہ اللہ فرماتے ہیں:

’’یہاں تک کہ جو ملازم ہوتا ہے اگر وہ چاہتا ہے کہ اسے اس کی تنخواہ پوری ملے، لیکن وہ جاب ٹائم پر آنے میں تاخیر کرتا ہے یا جانے میں جلدی چلا جاتا ہے، تو وہ بھی ان ’’المطففين‘‘  میں داخل ہے جنہیں اللہ تعالی نے ’’ويل‘‘ کی وعید سنائی ہے ‘‘۔

mulazimeen_k_liye_tanbeeh