Which Fiqh Madhab do you follow? – Shaykh Abdul Azeez bin Abdullaah bin Baaz

آپ کا فقہی مذہب کیا ہے؟   

فضیلۃ الشیخ عبدالعزیز بن عبداللہ بن باز رحمہ اللہ المتوفی سن 1420ھ

(سابق مفتئ اعظم، سعودی عرب)

ترجمہ: طارق علی بروہی

مصدر: لقاء مع صحيفة الراية السودانية۔

پیشکش: توحیدِ خالص ڈاٹ کام


بسم اللہ الرحمن الرحیم

سوال: سماحۃ الشیخ کیا آپ کا کوئی خاص فقہی مذہب ہے نیز فتویٰ دینے اور دلائل کے بارے میں آپ کا کیا منہج ہے؟

جواب: فقہ میں میرا مذہب امام احمد بن حنبل رحمہ اللہ کا ہے لیکن بطور تقلید نہیں بلکہ بطور ان اصول کی اتباع میں جن پر وہ چلے۔ جہاں تک اختلافی مسائل کا تعلق ہے تو میرا اس بارے میں منہج یہ ہے کہ میں اسی مؤقف کو ترجیح دیتا ہوں جس کے دلائل متقاضی ہوتے ہیں اور فتویٰ بھی اسی پر دیتاہوں اگرچہ وہ حنابلہ کے مذہب کے موافق ہو یا خلاف۔ کیونکہ حق اس بات کا زیادہ حقدار ہے کہ اس کی اتباع کی جائے۔ اللہ تعالی کا فرمان ہے:

﴿يٰٓاَيُّھَا الَّذِيْنَ اٰمَنُوْٓا اَطِيْعُوا اللّٰهَ وَاَطِيْعُوا الرَّسُوْلَ وَاُولِي الْاَمْرِ مِنْكُمْ ۚ فَاِنْ تَنَازَعْتُمْ فِيْ شَيْءٍ فَرُدُّوْهُ اِلَى اللّٰهِ وَالرَّسُوْلِ اِنْ كُنْتُمْ تُؤْمِنُوْنَ بِاللّٰهِ وَالْيَوْمِ الْاٰخِرِ ۭ ذٰلِكَ خَيْرٌ وَّاَحْسَنُ تَاْوِيْلًا﴾ (النساء: 59)

(اے لوگو جو ایمان لائے ہو! اللہ کی اطاعت کرو اور رسول کی اطاعت کرو اور ان کی بھی جو تمہارے حکمران ہیں، پھر اگر تم کسی چیز میں تنازع کربیٹھو تو اسے اللہ اور رسول کی طرف لوٹاؤ، اگر تم اللہ اور یوم آخرت  پر ایمان رکھتے ہو، یہ خیر ہے اور انجام کے لحاظ سے زیادہ احسن ہے