“La ilaha illa Allaah” its status, virtue, pillars, conditions and meaning – Shaykh Saaleh bin Fawzaan Al-Fawzaan

لا الہ الا اللہ کی منزلت، فضیلت، ارکان، شرائط و معنی  

فضیلۃ الشیخ صالح بن فوزان الفوزان حفظہ اللہ

(سنیئر رکن کبار علماء کمیٹی، سعودی عرب)

ترجمہ: طارق علی بروہی

مصدر: لا إله إلا الله مكانتها، فضلها، وأركانها، شروطها، معناها۔

پیشکش: توحیدِ خالص ڈاٹ کام


بسم اللہ الرحمٰن الرحیم

شیخ صالح الفوزان حفظہ اللہ فرماتے ہیں:

اس عظیم کلمہ لاالہ الااللہ کی اتنی بلند منزلت ومرتبت ہےدیگرتمام اذکارکےمابین اوراس کےمتعلق جواحکام ہیں اورشرائط ہیں، اوراس کامعنی اورتقاضے ہیں، لہذا اس اعتبارسےتوپھریہ جاننابھی ضروری ہےیہ ایساکلمہ نہیں ہےکہ بس زبان سےاس کواداکردیاجائے۔جب معاملہ ایسا ہے تواس کتاب  کاموضوع ان نکات پرمشتمل ہےکہ زندگی میں”لاالہ الااللہ”کاکیامقام ومرتبہ ہے،اس کی فضیلت، اس کے کیا اعراب، ارکان، شرائط، معنی اورتقاضے ہیں، اورکب انسان کواس کاتلفظ (یعنی اسے ادا کرنا اور اسےپڑھنا) فائدہ دیتاہےاورکب فائدہ نہیں دیتا،اوراس کےجوآثارہیں وہ بھی ذکرکیے گئے ہیں۔

اللہ سبحانہ وتعالی سےامیدرکھتےہوئے کہ وہ مجھےاورآپ کواس کےحقیقی اہل میں سےکردےکہ جواس کومضبوطی سے تھامتےہیں، اس کےمعنی کی مکمل معرفت رکھتےہیں، اوراس کےتقاضوں  پر ظاہراً وباطناً عمل پیراہوتےہیں۔