menu close menu

اس دنیا اور شہوات کے ساتھ بہہ نہ جانا! – شیخ ربیع بن ہادی المدخلی

Do not be relax with this world and desires! – Shaykh Rabee bin Hadee Al-Madkhalee
 

اس دنیا اور شہوات کے ساتھ بہہ نہ جانا   

فضیلۃ الشیخ ربیع بن ہادی المدخلی حفظہ اللہ

(سابق صدر شعبۂ سنت، مدینہ یونیورسٹی)

ترجمہ: طارق علی بروہی

مصدر: المجموع الرائق مِن الوصايا والزهديات والرقائق، ص 23

پیشکش: توحیدِ خالص ڈاٹ کام


بسم اللہ الرحمٰن الرحیم

اے بھائی! اس دنیا  ، شہوات، وساوس وفاسد خیالات کے ساتھ بہہ نہ جانا۔ کوشش کریں کہ اچھی طرح سے سوچ وبچار کریں اس چیز میں جو آپ کو نفع دے، کوشش کرکے عقل پکڑیں، کوشش کریں کہ آپ بس موت کے منتظر رہیں۔  اگر شام کریں تو صبح کا انتظار نہ کریں اور صبح کریں تو شام کا انتظار نہ کریں۔ آرزوؤں کو طول نہ دیں، لمبی خواہشات کے پیچھے نہ لگیں۔ آپ چاہتے ہیں کہ محل بنائیں اور پورے فلور کے مالک بن جائيں۔ کم چیز کے مالک بنیں۔ جب آپ اپنے نفس کو توڑ دیں گے تو سکون پائیں گے۔ کوشش کریں، اسے قید کریں اور ثابت قدم رکھیں۔ کیونکہ اسے معالجہ کی ضرورت ہے۔ عقل پکڑیں، یہ اللہ تعالی کا دین ہے، اور آپ اللہ تعالی کی قسم نہیں جانتے کہ کب آپ کو موت اپنے آغوش میں لے لے اور آپ ناجانے کس حال میں ہوں۔ تمام احوال میں تقوی الہی کو اپنا ساتھی بنائيں(جیسا کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا) :

’’اِتَّقِ اللَّهَ حَيْثُمَا كُنْتَ‘‘([1])

(اللہ تعالی سے ڈرو جہاں کہیں بھی تم ہو)۔

اللہ تعالی کی عبادت کریں اور ایسے بن جائیں کہ  آپ اسے دیکھ رہے ہیں، او رآپ نہیں دیکھ رہے تو وہ آپ کو دیکھ رہا ہے۔  اس قسم کے پاک شعور واحساس سے دل کو زندگی ملتی ہے۔ اور ان شعور واحساس کے فقدان سے العیاذ باللہ بندہ ہر قسم کی بلاء ومصائب کا ہی منتظر رہتا ہے، العیاذ باللہ۔  صاف دل ایک صاف کپڑے کی مانند ہوتا ہے جو ایک نقطے تک کو اپنے پر برداشت نہیں کرتا۔ جبکہ مردہ دل بے حس ہوتا ہے اگر اسے چھریوں تک سے چھلنی کردیا جائے، چھریوں ،خنجروں اور نیزوں سے اسے چیر پھاڑ دیا جائے وہ بے حس ہی رہتا ہے کیونکہ وہ مرچکا ہے۔ اللہ تعالی ہی سے عافیت کا سوال ہے۔

 


[1] صحیح ترمذی 1987۔

November 28, 2014 | الشيخ ربيع المدخلي, زہد ورقائق, مقالات | 0

tawheedekhaalis is on Mixlr

Tawheedekhaalis.com

Tawheedekhaalis.com