menu close menu

امام مسلم رحمہ اللہ اور صحیح مسلم کا مختصر تعارف – شیخ محمد بن صالح العثیمین

Brief Introduction of Imaam Muslim (rahimaullaah) and his Book "Saheeh Muslim" – Shaykh Muhammad bin Saaleh Al-Uthaimeen

امام مسلم  رحمہ اللہ اور صحیح مسلم کا مختصر تعارف   

فضیلۃ الشیخ محمد بن صالح العثیمین رحمہ اللہ المتوفی سن 1421ھ

(سابق سنئیر رکن کبار علماء کمیٹی، سعودی عرب)

ترجمہ: طارق علی بروہی

مصدر: مصطلح الحديث

پیشکش: توحیدِ خالص ڈاٹ کام


بسم اللہ الرحمن الرحیم

 

صحیح مسلم

 

یہ وہ مشہور کتاب ہے جو امام مسلم بن الحجاج رحمہ اللہ نے تالیف فرمائی۔ اس میں انہوں نے وہ احادیث جمع کی جو ان کے نزدیک رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے صحیح طور پر ثابت تھیں۔ امام نووی رحمہ اللہ نے فرمایا:

’’سلك فيه طرقاً بالغة في الاحتياط، والإتقان، والورع، والمعرفة، لا يهتدي إليها إلا أفراد في الأعصار‘‘

(  امام مسلم  نے اس میں حد درجے احتیاط، کمال نفاست، دیانتداری اور معرفت کے وہ راستے اپنائے ہیں کہ ان راستوں کی جانب ہدایت زمانے بھر میں معدودے چند لوگوں کو ہی ملتی ہے )۔

 

آپ مناسبت رکھنے والی تمام احادیث کو ایک ہی جگہ پر جمع کردیتے، اورحدیث کے طرق اور الفاظ ابواب کی ترتیب سےبیان فرماتےہیں۔ لیکن آپ نے تراجم (باب کے عناوین) ذکرنہیں کیے۔ یا تو اس لیے کہ کہیں کتاب کا حجم نہ بڑھ جائے یا کسی اور وجہ سے۔

 

 چناچہ اس کے تراجم شارحین کی ایک جماعت نے وضع فرمائے ہیں۔ جن میں سےسب سے بہترین امام نووی رحمہ اللہ کے تراجم ہیں۔

 

صحیح مسلم کی احادیث مکررکے ساتھ 7275 ہیں اور مکرر کو حذف کرکے تقریباً 4000 بنتی ہیں۔

جمہور علماء یا تمام ہی علماء کا اتفاق ہے صحت کے اعتبار سے صحیح بخاری کے بعد یہ دوسرے مرتبہ پر ہے۔ اور دونوں  کے موازنے کے بارے میں یہ بھی کہا گیا کہ:

تشاجر قوم في البخاري ومسلم

لدي وقالوا: أي ذين تقدم

فقلت: لقد فاق البخاري صحة

كما فاق في حسن الصناعة مسلم

(بخاری او رمسلم کے تعلق سے لوگوں نے میرے پاس جھگڑا کیا کہ ان میں سے کون سی مقدم ہے۔ میں نے کہا بخاری صحت کے اعتبار سے فائق ہے جیسا کہ مسلم حسن صناعت (ترتیب وغیرہ) کے اعتبار سے فائق ہے)۔

 

امام مسلم رحمہ اللہ

 

آپ أبو الحسين مسلم بن الحجاج بن مسلم القشيري النيسابوري ہیں۔  نیشاپور میں سن204ھ میں پیدا ہوئے۔ اور طلب حدیث کے لیے مختلف شہروں میں منتقل ہوتے رہے۔ پس آپ نے الحجاز والشام والعراق ومصرکی طرف رحلہ (سفر) کیا۔ پھر جب امام بخاری رحمہ اللہ نیشاپور آئے تو ان کی ملازمت (یعنی ان کا ساتھ) اختیار کیا، ان کے علم کو دیکھا اور انہی کے نقش قدم پر چلے۔

 

امام مسلم کی کئی علماء اہلحدیث  اور ان کے علاوہ بھی  علماء نے تعریف  فرمائی۔

 

57 سال کی عمر میں سن 261ھ میں ان کی وفات نیشاپور میں ہوئی۔  اپنی تالیفات میں آپ نے بہت سا علمی ذخیرہ چھوڑا ہے۔ اللہ تعالی آپ پر رحم ‌فرمائے اور مسلمانوں کی طرف سے انہیں جزائے خیر عطاء فرمائے۔

February 16, 2015 | الامام مسلم, سوانح عمری, علماء کرام | 0

tawheedekhaalis is on Mixlr

www.tawheedekhaalis.com

www.tawheedekhaalis.com