کب ایک انسان کولاالہ الااللہ کہنافائدہ دیتاہےاور کب فائدہ نہیں دیتا- شیخ صالح بن فوزان الفوزان

کب ایک انسان کولاالہ الااللہ کہنافائدہ دیتاہےاور کب فائدہ نہیں دیتا- شیخ صالح بن فوزان الفوزان

When saying "La ilahaa illa Allaah" is beneficial to a person and when not – Shaykh Saaleh bin Fawzaan Al-Fawzaan

کب ایک انسان کولاالہ الااللہ کہنافائدہ دیتاہےاور کب فائدہ نہیں دیتا   

فضیلۃ الشیخ صالح بن فوزان الفوزان حفظہ اللہ

(سنیئر رکن کبار علماء کمیٹی، سعودی عرب)

ترجمہ: طارق علی بروہی

مصدر: لا إله إلا الله مكانتها، فضلها، وأركانها، شروطها، معناها۔

پیشکش: توحیدِ خالص ڈاٹ کام


بسم اللہ الرحمٰن الرحیم

شیخ صالح الفوزان حفظہ اللہ فرماتے ہیں:

ہم نےپہلے یہ بیان کیا کہ لاالہ الااللہ کہنے کےساتھ ضروری ہےاس کےمعنی کی معرفت ہواوراس کےتقاضوں پرعمل ہو،لیکن چونکہ ایسےنصوص موجودہیں جن سےبعض لوگوں کو یہ وہم  ہوسکتاہےکہ محض زبان سےتلفظ کرنابھی کافی ہے۔اوراس وہم کےساتھ بعض لوگ جڑےہوئے ہیں،چناچہ جب معاملہ اس طرح ہےتوضروری ہےکہ ہم اس کی وضاحت کریں تاکہ اس وہم کاازالہ ہواس  شخص کےلئےجوواقعتاًحق بات چاہتاہے۔

تفصیل کے لیے مکمل مقالہ پڑھیں۔