تعویذ گنڈہ کی خرافات – شیخ عبدالرزاق بن عبدالمحسن العباد

تعویذ گنڈہ کی خرافات – شیخ عبدالرزاق بن عبدالمحسن العباد

Superstitions of Taweez (Charms and Amulets) – Shaykh Abdur Razzaq bin Abdul Muhsin Al-Abbaad

شیخ عبدالرزاق البدر حفظہ اللہ فرماتے ہیں:

مسند احمد ہی میں سیدنا عقبہ بن عامر رضی اللہ عنہ کی حدیث میں آیا ہے کہ فرماتے ہیں:

’’أَنّ رَسُولَ اللَّهِ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم أَقْبَلَ إِلَيْهِ رَهْطٌ، فَبَايَعَ تِسْعَةً وَأَمْسَكَ عَنْ وَاحِدٍ، فَقَالُوا: يَا رَسُولَ اللَّهِ، بَايَعْتَ تِسْعَةً وَتَرَكْتَ هَذَا؟ ! قَالَ: إِنَّ عَلَيْهِ تَمِيمَةً، فَأَدْخَلَ يَدَهُ فَقَطَعَهَا، فَبَايَعَهُ، وَقَالَ: مَنْ عَلَّقَ تَمِيمَةً فَقَدْ أَشْرَكَ‘‘([1])

(ایک چھوٹا سا گروہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے پاس آیا پس آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے ان میں سے نو کی بیعت لی جبکہ ایک سے رک گئے۔ انہوں نے کہا: آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے نو کی تو بیعت لے لی مگر اس ایک سے رک گئے؟ فرمایا: اس نے تعویذ باندھ رکھا ہے۔ پس اس نے اپنا ہاتھ اندر ڈالا اور اسے کاٹ دیا، پھر نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے اس سے بیعت لی اور فرمایا: جس نے تعویذ پہنا اس نے شرک کیا)۔

 


[1] مسند احمد 16969، السلسۃ الصحیحۃ 1/889۔

 

2013-09-23T06:08:11+00:00