اناشید (اسلامی ترانوں/نظموں)، ڈراموں، سمر کیمپس سے متعلق کچھ سوالات – شیخ احمد بن یحیی النجمی

اناشید (اسلامی ترانوں/نظموں)، ڈراموں، سمر کیمپس سے متعلق کچھ سوالات – شیخ احمد بن یحیی النجمی

Some questions regarding Islamic Anasheed, dramas and summer camps – Shaykh Ahmed bin Yayhaa An-Najmee

امام شافعی رحمہ اللہ نے فرمایا:

’’میں عراق میں اپنے پیچھے زندیقوں کی ایک قوم چھوڑآیا ہوں جنہوں نے ایک نئی چیز بدعت ایجاد کی جسے وہ ’’التغبير‘‘ کا نام دیتے ہیں جس کے ذریعے سے وہ لوگوں کو قرآن سے غافل کرکے اسے ہی سننے میں مگن رکھتے ہیں‘‘۔

 امام ابن الجوزی امام شافعی رحمہما اللہ کا سابقہ کلام نقل کرکے فرماتے ہیں:

’’المغیرہ کی اصطلاح سے متعلق ابو منصور الازہری رحمہ اللہ فرماتے ہیں کہ وہ ایسے لوگ تھے جو ذکر الہی، دعاء اور تضرع وزاری کے ذریعے حال متغیر کرتے تھے، جن ذکر الہی پر مبنی اشعار پر وہ تھرکتے تھے اسے وہ تغیر کا نام دیتے تھے‘‘۔

شیخ احمد النجمی رحمہ اللہ سے پوچھا گیا:

فضیلۃ الشیخ گزشتہ کچھ برسوں سے اناشید اسلامیہ (اسلامی نظموں ترانوں) کے متعلق کافی بحثیں اور لے دے ہورہی ہے۔ لوگوں میں سے بعض اس کی تائید کرتے ہیں اور بعض مخالف ہیں۔ ہم چاہتے ہیں کہ آپ اس موضوع پر کوئی قولِ فیصل بیان کریں۔ اور ایسے لوگوں کے لیے آپ کی کیا نصیحت ہے جو عوام کی تربیت انہی اناشید پر کرتے ہیں اور انہی سننے پر ابھارتے ہیں۔ اور کہتے ہیں یہ گانے بجانے سے تو بہتر ہے۔ اس مسئلے سے متعلق ہمیں مستفید فرمائیں۔ جزاکم اللہ خیراً؟

تفصیل کے لیے مکمل مقالہ پڑھیں ۔ ۔ ۔

2013-06-21T06:53:18+00:00