سلفی کہلانے میں حرج محسوس کرنا – شیخ احمد بن یحیی النجمی

سلفی کہلانے میں حرج محسوس کرنا – شیخ احمد بن یحیی النجمی

Hesitating in Calling oneself "Salafee" – Shaykh Ahmed bin Yahyaa An-Najmee

سلفی کہلانے میں حرج محسوس کرنا   

فضیلۃ الشیخ احمد بن یحیی النجمی رحمہ اللہ  المتوفی سن 1429ھ

(سابق مفتی جنوبی سعودی عرب)

ترجمہ: طارق علی بروہی

مصدر: الفتاوى الجلية عن المناهج الدعوية س 12 (سحاب السلفیۃ ایڈیشن)۔

پیشکش: توحیدِ خالص ڈاٹ کام


بسم اللہ الرحمن الرحیم

 

سوال: بعض نوجوان اپنے آپ کو سلفی کہلانے میں حرج محسوس کرتے ہیں، اس بارے میں آپ کیا توجیہ فرمائیں گے؟

 

جواب: وہ کیوں حرج محسوس کرتے ہیں؟!!کیا یہ لوگ سلفیت کی جانب انتساب کو ناقص تصورکرتے ہیں؟!! کیا یہ اصحاب رسول e اور ہر زمان ومکان میں ان کی اتباع کرنے والے علماء، فقہاء،محدثین، مفسرین اور صحیح عقیدے کے حاملین کی جانب انتساب نہیں کہ جو کتاب اللہ اور صحیح سنت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی فہم سلف صالحین کے مطابق پیروی کرنے والے ہیں!! کیا ان کی جانب انتساب ناقص ہے کہ جس کی وجہ سے یہ لوگ حرج محسوس کرتے ہیں!! إنا لله وإنا إليه راجعون۔

 

پس اگر کوئی واقعی منہج سلف چاہتا ہے، اس کی اتباع کرتا ہے اور کہتا ہے کہ میں سلفی ہوں تو ہم اس کے لیے خیر کی امید کرتے ہیں۔ لیکن اگر وہ اس میں حرج محسوس کرتا ہے تو ممکن ہے اس بات پر اس کی تعزیر تک کی جائے۔

2013-06-08T04:05:50+00:00