اسلامی نظمیں اور ڈرامے – شیخ عبدالسلام بن برجس آل عبدالکریم

اسلامی نظمیں اور ڈرامے – شیخ عبدالسلام بن برجس آل عبدالکریم

Islamic Anasheed and Dramas – Shaykh Abdus Salaam bin Burjus Aal-Abdul Kareem

اسلامی نظمیں اور ڈرامے

فضیلۃ الشیخ عبدالسلام بن برجس آل عبدالکریم رحمہ اللہ  المتوفی سن 1425ھ

( سابق مساعد استاد المعھد العالي للقضاء، الریاض)

ترجمہ: سید عبدالحلیم

مصدر: السنة والبدعة وأثرهما على الأمة۔

پیشکش: توحیدِ خالص ڈاٹ کام


بسم اللہ الرحمن الرحیم

 

دوسرا سوال:یہ صاحب بھی (اسلامی) نظموں اور اداکار ی وڈراموں کے بارے میں معلوم کر رہے ہیں کہ کیا یہ دونوں چیزیں بدعت ہیں؟

 

جواب: جہاں تک اداکاری وڈراموں کا تعلق ہے تو کیوں کہ اس میں بہت سی حرام باتیں بھی شامل ہوتی ہیں، تو اس لیے اداکاری تو حرام ہے ، اور اگر کوئی اداکاری وڈراموں کو دعوتِ دین کے لیے استعمال کرتا ہے تو میری نگاہ میں ایسا کرنا بدعت ہے۔

 

جہاں تک اناشید نظموں کا تعلق ہے جنہیں اچھے انداز و(بناموسیقی) ترنم سے پڑھا جاتا ہے تو ان کے پڑھے جانے میں کوئی حرج نہیں ہےکیوں کہ صحابہ کرام بھی نبی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے ساتھ غزوات اور جنگوں میں اچھے اشعار کو پڑھ لیا کرتے تھے۔جب کہ جو نظمیں بالکل گانوں کے طرز پر ہوں یا جو نظمیں صوفیانہ انداز کی ہوں تو ان سے پوری طرح گریز کرنا چاہیئے کیونکہ ان سے منع کیے جانے کے بارے میں دلائل وارد ہیں۔

2012-12-12T03:09:43+00:00