اللہ کی لعنت ہو اس شخص پر جو کسی بدعتی کو پناہ دے – شیخ احمد بن یحیی النجمی

اللہ کی لعنت ہو اس شخص پر جو کسی بدعتی کو پناہ دے – شیخ احمد بن یحیی النجمی

The Curse of Allaah upon those who give refuge to an innovator – Shaykh Ahmed bin Yahyaa An-Najmee

اللہ کی لعنت ہو اس شخص پر جو کسی بدعتی کو پناہ دے   

فضیلۃ الشیخ احمد بن یحیی النجمی رحمہ اللہ  المتوفی سن 1429ھ

(سابق مفتی جنوبی سعودی عرب)

ترجمہ: طارق علی بروہی

مصدر: شیخ " کی ریاض میں ایک ریکارڈنگ سے ماخوذ۔

پیشکش: توحیدِ خالص ڈاٹ کام


بسم اللہ الرحمن الرحیم

 

سوال: سائل دریافت کرتا ہے کہ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا: ’’لَعَنَ اللَّهُ مَنْ آوَى مُحْدِثًا ‘‘([1]) (اللہ تعالی نے لعنت فرمائی اس شخص پر جو کسی بدعتی یا مجرم کو پناہ دے) کیا یہ حدیث طالبان حکومت پر منطبق (فٹ) ہو سکتی ہے؟ خاص طور پر جب انہوں نے خوارج کو پناہ دی اور انہیں ’’معسکر الفاروق‘‘ فراہم کیا جو کہ اسامہ بن لادن کی سرپرستی میں کام کررہا ہےاور اس کے گروہ یا گینگ ہیں المعتم گروپ، الشہرانی گروپ، الہاجری گروپ اور السعید گروپ، یہی چاروں فتنہ وفساد برپا کرنے میں پیش پیش ہیں اور ہمارے یہاں کے علماء اور حکام کی تکفیر کرتے ہیں؟

جواب: بیشک ان لوگوں کا شماربدعتیوں میں ہوتا ہے، اور وہ لوگ بھی جنہوں نے انہیں پناہ دی نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی اس وعید میں داخل ہیں اور اس لعنت میں بھی جو اس کام کے مرتکب پر کی گئی ہے :

’’لَعَنَ اللَّهُ مَنْ آوَى مُحْدِثًا ‘‘

(اللہ تعالی نے لعنت فرمائی اس شخص پر جو کسی بدعتی یا مجرم کو پناہ دے)۔

اگر کوئی شخص ناحق قتل کرے اورآپ اس کی پشت پناہی کرتے ہوئےمقتول کے ورثاء سے کہیں کہ تم اس قاتل کو کچھ نہیں کہہ سکتے ، تو کیا اس صورت میں آپ اس مجرم کی پشت پناہی کرنے والے نہیں کہلائیں گے؟!۔

 


[1] صحیح مسلم: 1979۔

 

2012-08-15T01:54:15+00:00