حزبیوں کے ساتھ کیا سلوک کیا جائے – شیخ احمد بن یحیی النجمی

حزبیوں کے ساتھ کیا سلوک کیا جائے – شیخ احمد بن یحیی النجمی

How to Treat Hizbees? – Shaykh Ahmed bin Yahyaa An-Najmee

حزبیوں سے کیا برتاؤ کیا جائے؟

فضیلۃ الشیخ احمد بن یحیی النجمی رحمہ اللہ  المتوفی سن 1429ھ

(سابق مفتی جنوبی سعودی عرب)

ترجمہ: طارق علی بروہی

مصدر: شیخ احمد بن یحیی نجمی (رحمۃ اللہ علیہ)کی تقریر بعنوان "کتاب وسنت کو تھامنا ہی راہ نجات ہے" کے آخر میں کیے گئے سوالات سے ماخوذ، سوال 4

پیشکش: توحیدِ خالص ڈاٹ کام


بسم اللہ الرحمن الرحیم

 

سوال ٤: فضیلۃ الشیخ ہم امید کرتے ہیں خواہ جلدی میں ہی آپ ہمارے لئے وضاحت کر دیں کہ کیا برتاؤ کیا جائے میدان میں موجود کچھ ایسے داعیوں کے ساتھ جو بعض سلفی مسائل کے مخالف ہیں کیا ہم ان کے ہر خیر وشر کو ترک کر دیں یا ان سے وہ چیز لے لی جائے جو شریعت کے موافق ہے اور باقی چھوڑ دی جائے؟

 

جواب: آپ پر لازم ہے جب آپ کو قدرت ہو اور حزبیت کے طریقے کا جو بعض لوگ عقیدہ رکھتے ہیں اس کی طرف ان کا جھکاؤ آپ پر واضح ہو تو آپ کے لئے ضروری ہے کہ ایسے داعی کو آپ بتائیں یعنی اس کی اس حوالے سے حق کی مخالفت-

 

رہاحق وباطل کا اس کے ہاں پایا جانا، جو حق اس کے پاس ہے وہ دوسروں سے بھی ملے گا (جن کے ایسے منحرف مناہج) نہیں۔۔۔۔۔۔(ریکارڈنگ میں کلام غیر واضح ہے)۔۔۔۔۔۔ اور کوئی اختلاط نہیں، اور جب آپ اسے نصیحت کریں اور آپ کی نصیحت وہ قبول نہ کرے تو اس سے دور رہنے کی کوشش کریں اور اسے ترک کر دیں اور اللہ سبحانہ وتعالی۔۔۔۔۔۔(ریکارڈنگ میں کلام غیر واضح ہے)۔۔۔۔۔۔

2012-08-14T13:34:22+00:00

Articles

Scholars