menu close menu

ہم اہل قبلہ میں سے کسی کے لیے جنت یا جہنم کی گواہی نہیں دیتے – شیخ ربیع بن ہادی المدخلی

We do not testify for anyone from among the people of the Qiblah that he is in Paradise or in Hell-Fire – Shaykh Rabee bin Hadee Al-Madkhalee

امام احمد بن حنبل رحمہ اللہ نے ’’اصول السنۃ‘‘ میں فرمایا :

’’ہم اہلِ قبلہ میں سے کسی کے بارے میں اس کے عمل کی بناء پر جو وہ کرتا ہے (قطعی طور پر) جنت یا جہنم کی گواہی نہیں دیتے، (بلکہ) نیکوکار کے لئے (جنت کی) امید رکھتے  اور ساتھ میں ڈرتے بھی ہیں(کہیں اعمال غیر مقبول نہ ہوں)، اور نافرمان گنہگار کے لئے (جہنم) کا خوف رکھتے ہیں، اور (ساتھ ہی)اس کے لئے اللہ تعالی کی رحمت (اور بخشش) کی امید بھی رکھتے ہیں۔ جس نے ایسا گناہ کیا جس سے جہنم واجب ہوتی ہےمگر اس پر اصرار نہ کرتے ہوئے تائب ہوگیا اور اس حال میں اللہ تعالی سے ملاقات کی تو اللہ تعالی اس کی توبہ کو قبول فرماتے ہیں۔ وہی اپنے بندوں کی توبہ کو قبول فرماتے اور گناہوں سے درگزر فرماتے ہیں۔جس نے کوئی  ایسا گناہ کیا جس کی حد اس پر دنیا میں قائم ہوچکی ہو اور اس حال میں اللہ تعالی سے ملاقات کی تو وہ اس کے لئے کفارہ ہوگا، جیسا کہ رسول اللہ ﷺ سےمروی خبر(حدیث) میں وارد ہوا۔ (لیکن) جس نے ایسا گناہ کیا جس پر عقوبت وسزا مقرر ہے اور وہ اس پر اصرار کرتا ہےاور توبہ نہیں کرتااور اسی حال میں اللہ تعالی سے ملاقات کی تو اس کا معاملہ اللہ تعالی کے سپرد ہے چاہے تو اسے عذاب فرمائے اور چاہے تو اسے بخش دے۔ (مگر) جو اس حال میں اللہ تعالی سے ملاقات کرے کہ وہ کافر ہو تو اللہ تعالی اسے عذاب فرمائیں گے اور مغفرت نہیں فرمائیں گے‘‘۔

اس پر شیخ ربیع المدخلی حفظہ اللہ کی شرح  جاننے کے لیے مکمل مقالہ پڑھیں۔

January 18, 2017 | الإمام أحمد بن حنبل, الشيخ ربيع المدخلي, عقیدہ ومنہج, مقالات | 0

tawheedekhaalis is on Mixlr

Tawheedekhaalis.com

Tawheedekhaalis.com