menu close menu

نشید ’’طلع البـدر علينا‘‘  کی حقیقت – شیخ صالح بن فوزان الفوزان

The reality of the famous Nasheed "Tala'a-al-Badru Alayna" – Shaykh Saaleh bin Fawzaan Al-Fawzaan

نشید ’’طلع البـدر علينا‘‘  کی حقیقت   

فضیلۃ الشیخ صالح بن فوزان الفوزان حفظہ اللہ

(سنیئر رکن کبار علماء کمیٹی، سعودی عرب)

ترجمہ: طارق علی بروہی

مصدر: یوٹیوب پر موجود ویڈیو کلپ سے ماخوذ ۔

پیشکش: توحیدِ خالص ڈاٹ کام


بسم اللہ الرحمٰن الرحیم

سوال: کیا یہ بات صحیح ہےکہ اہل مدینہ نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا استقبال اس نشید کے ساتھ کیا تھا ’’طلع البدر علينا‘‘، کیونکہ بعض ایسے لوگ ہیں جو اناشید کے جائز ہونے پر اس سے استدلال کرتے ہیں؟

جواب: یہ قصہ ثابت نہیں ہے، ساتھ ہی اس میں ایسی باتیں ہیں جو اس بات پر دلالت کرتی ہیں کہ اس کی کوئی اصل نہیں، کیونکہ اس میں ہے کہ ’’طلع البدر علينا من ثنيات الوداع‘‘!

حالانکہ یہ جگہ ’’ثنيات الوداع‘‘  مکہ کے راستے میں نہیں، کیونکہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم جنوبی راستے سے مدینہ تشریف لائے تھے ناکہ شمالی راستے سے کہ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا گزر  ثنيات الوداع سے ہوتا۔

ثنيات الوداع مدینہ کے شمال میں ہے، تو یہ منطبق ہی نہیں ہوتا!!

 

November 19, 2018 | الشيخ صالح بن فوزان الفوزان, بدعات, مقالات | 0

tawheedekhaalis is on Mixlr

Tawheedekhaalis.com

Tawheedekhaalis.com