menu close menu

سب ہی سلفی ہونے کے دعویدار ہیں! – شیخ محمد ناصرالدین البانی

Everyone claims to be a Salafee! – Shaykh Muhammad Naasir-ud-Deen Al-Albaanee

سب ہی سلفی ہونے کے دعویدار ہیں!   

فضیلۃ الشیخ محمد ناصرالدین البانی رحمہ اللہ  المتوفی سن 1420ھ

(محدث دیارِ شام)

ترجمہ: طارق علی بروہی

مصدر: سلسلۃ الھدی والنور 188۔

پیشکش: توحیدِ خالص ڈاٹ کام


بسم اللہ الرحمن الرحیم

سائل: بعض عرب ممالک میں ایسی جماعت ظاہر ہوئی ہے جو دعویٰ کرتے ہيں کہ ہم سید قطب کے پیروکار ہیں، اور ہم ہی حقیقی سلفی ہیں، آپ کی اس بارے میں کیا رائے ہے؟

شیخ: میری رائے تو وہی ہے اس کے بارے میں، اور اس پر یہی جواب ہے میرا کہ:

والدعاوي ما لم تقيموا عليـها بينات فأبناؤها أدعياءُ

مفہوم: ’’جب تک کسی دعوے پر دلیل مہیا نہ کی جائے تو وہ بس نام نہاد دعوے ہی دعوے ہيں‘‘۔

ہم یہ اعتقاد رکھتے ہيں کہ سید قطب رحمہ اللہ عمومی طور پر اپنی زندگی میں سلفی منہج پر نہیں تھا، لیکن اپنی زندگی کے آخری ایام میں  سلفی منہج کی طرف قدرے قوی رجحان محسوس ہوتا ہے جب وہ جیل میں تھا۔ پس سلفیت محض دعوے کا نام نہيں ہے۔سلفیت کتاب وسنت صحیحہ اور آثار سلفیہ کی معرفت طلب کرتی ہے۔ہم ان لوگوں کو اور ان جیسے دوسروں کو جانتے ہيں کہ جو یہ دعویٰ کرتے ہيں کہ ہماری دعوت کتاب وسنت پر قائم ہے، حالانکہ پہلی بات تو یہ ہے کہ وہ کتاب اللہ کے فہم کے اصول ہی نہيں جانتے۔ اور یہ اصول معروف ہیں جیسے امام ابن تیمیہ رحمہ اللہ نے اصول الفقہ سے متعلق اپنے رسالے میں بیان فرمائے۔ اور آئمہ تفسیر کا کلام جیسے امام ابن جریر وابن کثیر رحمہما اللہ وغیرہ، کہ قرآن کی تفسیر قرآن سے ہوگی، ورنہ حدیث سے، ورنہ اقوال صحابہ رضی اللہ عنہم سے، اور جو ان کے علاوہ سلف صالحین ہيں۔ یہ جو سلفیت کا دعویٰ کرتے ہیں وہ قرآن کی تفسیر میں علماء المسلمین کے مابین متفق علیہ اس علمی طریقے پر نہيں چلتے۔

سائل: کیا قطبی لوگوں کےیہاں یہ بات پائی جاتی ہے؟

شیخ: ظاہر بات ہے بالکل پائی جاتی ہے۔ اسی لیے آپ سید قطب کی تفسیر میں بعض ایسی تفاسیر پائیں گے جو ان خلفیوں کے طریقے پر ہے جو سلف صالحین کی مخالفت کرتے ہیں۔

پھر میں یہ بھی کہنا چاہو ں گا کہ: وہ تو اس چیز کا بھی اہتمام نہیں کرتے کہ سنت میں صحیح وضعیف کی تمیز کریں، صحابہ کرام رضی اللہ عنہم اور سلف صالحین رحمہم اللہ کے آثار کی جستجو تو دور کی بات رہی۔کیونکہ یہ ان کے آثار ہی ہيں جو ایک عالم کو فہم کتاب وسنت میں مدد دیتے ہيں جس کی جانب ابھی ہم نے اشارہ کیا تھا۔

پھر کہاں سے ان پر سلفیت آسکتی ہے جبکہ درحقیقت وہ اس کی اول اصل یعنی قرآن کے فہم کے صحیح علمی اصول سے بہت دور ہیں، اسی طرح سے حدیث میں صحیح وضعیف کی تمیز کرنے سے بھی دور ہيں، اور پھر سلف صالحین کے آثار کی تلاش وپیروی تو اور بھی دور کی بات رہی، وہ ان آثار کو جانتے تاکہ ان کی ہدایت پر چلتے اور ان کے نور سے منور ہوتے۔

چناچہ یہ مسئلہ محض دعوؤں پر مبنی نہيں۔ آخر یہ لوگ کیوں سلفیت کا دعویٰ کرتے ہیں؟

اس کی وجہ یہی ہے جو میں نے اس سے پہلے والے سوال کے جواب میں ذکر کی تھی کہ آج اللہ تعالی کے فضل وکرم سے سلفی دعوت اسلامی منظر عام پر تقریباً چھائی ہوئی ہے، کیونکہ بلاشبہ یہی دعوت حق ہے۔ اسی لیے یہ لوگ اس کی طرف منسوب ہوتے ہيں اگرچہ اپنے عمل سے وہ اس سے کوسوں دور ہيں۔

December 6, 2016 | الشيخ محمد ناصر الدين ألباني, سلفیت, مقالات | 0

tawheedekhaalis is on Mixlr

Tawheedekhaalis.com

Tawheedekhaalis.com