menu close menu

بلند آواز میں اجتماعی درود کی مجالس بدعت ہیں – شیخ عبدالعزیز بن عبداللہ بن باز

Sending Salat upon Rasoolullaah صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم out loud in unison is a Bid'ah – Shaykh Abdul Azeez bin Abdullaah bin Baaz

بلند آواز میں اجتماعی درود کی مجالس بدعت ہیں   

فضیلۃ الشیخ عبدالعزیز بن عبداللہ بن باز  رحمہ اللہ  المتوفی سن 1420ھ

(سابق مفتئ اعظم، سعودی عرب)

ترجمہ: طارق علی بروہی

مصدر: حكم الاجتماع للصلاة على النبي صلى الله عليه وسلم بصوت مرتفع۔

پیشکش: توحیدِ خالص ڈاٹ کام


بسم اللہ الرحمٰن الرحیم

سوال:طائف سے ایک مستمع نے یہ خط بھیجا ہے جس میں کچھ سوالات ہیں، کہتا ہے: میں اللہ کے دین میں آپ کا بھائی صالح الحاج جسار الریمی الیمانی ہوں، ہمارا یہ بھائی اپنے ایک سوال میں پوچھتا ہے: ہمارے یہاں کچھ ایسی عادات و تقالید ہيں جو ہماری روشن اسلامی شریعت  کے مخالف ہيں، انہی عادات میں سے بعض یہ ہیں:

لوگ جمعہ کے روز نماز جمعہ سے پہلے جمع ہوکر نبی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم پر بآواز بلند اور اجتماعی طور پر درود پڑھتےہیں ۔ پھر یہ لوگ نبی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے فریادیں کرتے ہيں  اور صالحین اولیاء اللہ سے بھی ان الفاظ کے ساتھ کہ: یا رسول اللہ! اللہ کے لیے ہمیں عطاء کیجئے، اے صالحین اولیاء اللہ!  اللہ کے لیے ہمیں عطاء کیجئے، اے اللہ کے مومنین بندوں! ہمیں عطاء کیجئ، ! ہماری فریاد رسی اور امداد کریں۔۔۔اور اس جیسے دوسرے الفاظ۔ ہم اس بارے آپ سے رہنمائی چاہتے ہیں؟ جزاکم اللہ خیراً

جواب: جہاں تک سوال ہے نبی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم پر اجتماعی طور پربآواز بلند درود پڑھنے کا تو یہ بدعت ہے۔ مسلمانوں کے لیے جو چیز مشروع ہے وہ یہ ہے کہ  نبی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم پر درود  بھیجا کریں لیکن عجیب طرح سے آوازیں بلند کرکے نہيں اور نہ ہی اجتماعی طور پر۔ بس ہر کوئی اپنے اپنے طور پر درود پڑھے اور کہے:

اللهم صل على رسول الله، اللهم صل وسلم على رسول الله، اللهم صل على محمد وعلى آل محمد اور آخر تک جو درود پڑھے جاتے ہیں۔لیکن اسے اپنے تک رکھے۔۔۔

تفصیل کے لیے مکمل مقالہ پڑھیں

December 4, 2018 | الشيخ عبد العزيز بن باز, بدعات, مقالات | 0

tawheedekhaalis is on Mixlr

Tawheedekhaalis.com

Tawheedekhaalis.com